sultan Mehmood Ghaznavi 157

ایران کا بادشاہ اور محمود غزنوی رحمتہ اللہ

سکائی اُردو نیوز۔سلطان محمود رحمتہ اللہ کے پاس ایران کا بادشاہ اپنے سفیر کے ساتھ ملاقات کے لیے آیا ہوا تھا سارا دن امور سلطنت پر تبادلہ خیال میں گزرگیا۔رات کو کھانے کے بعد ایرانی بادشاہ اور سفیر کو مہمان خانے میں آرام کرنے کی غرض سے بھیج دیا گیا۔

[quads id=RndAds]

سلطان محمود غزنوی رحمتہ اللہ علیہ خود بھی مہمان خانہ میں ہی ایک الگ خیمہ نماہ کمرے میں ٹھہرے تاکہ مہمان داری میں کوئی کمی نہ رہ جائے تقریبا نصف رات کے وقت سلطان نے اپنے خیمہ کے باہر کھڑے غلام کو آواز دی ۔

مزید پڑھیں۔سحری میں یہ کھانے کھائیں بھوک پیاس کو بھول جائیں

[quads id=RndAds]

حسن اس نے پانی کا لوٹا اور خرمچی اُٹھائی اور خیمہ میں داخل ہوگیاایرانی بادشاہ بڑی حیرت سے اپنے خیمے کے پردے سے یہ منظر دیکھ رہاتھااور ساتھ ہی ساتھ سلطان محمود غزنوی رحمتہ اللہ علیہ کے غلام حسن کے باہر آنے کا منتظر بھی تھاجسیے کوئی سوال اس کو بے چین کیئے ہوئے تھا۔

[quads id=RndAds]

جیسے ہی حسن سلطان محمود غزنوی رحمتہ اللہ علیہ کے خیمے سے باہر نکلا ایرانی بادشاہ نے اسے بلایااور پوچھا جب سلطان نے تمہیں آواز دی حسن تو تمہارا حق تھا کے پہلے پوچھتے جی کیا حکم ہے آقا۔۔۔۔!
تم بنا پوچھے ہی پانی کا لوٹا اور خرمچی لے کر سلطان کے خیمےمیں چلے گئےہو سکتا ہے سلطان کو کسی اور چیز کی طلب ہو ۔

مزید پڑھیں۔انصاف امداد کی ایپ آگئی ابھی ڈاون لوڈ کریں ۔اور 12000 روپیے حاصل کریں۔

[quads id=RndAds]

حسن مسکرایا اور ایرانی بادشاہ کو جواب دیتے ہوئے بولا۔خضور میرا مکمل نام محمد حسن ہے اور میرا سلطان ہمیشہ با وضو رہتا ہے اور جب اس کا وضو نہ ہو تب ہی مجھے حسن کہہ کر پکارتے ہیں اور میں سمجھ جاتا ہوں سلطان کو وضو کی حاجت ہے جو انہوں نے اسم محمدﷺ اپنی زبان سے ادا نہیں کیاآج تک میرے سلطان نے بغیروضو کے مجھے محمد حسن کہہ کر نہیں پکارا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں