suduzai tribe 257

سدوزئی ایک عظیم مارشل قبیلہ

سدھنوتی تین لاکھ پچاس ہزار مرد و ز ن پونچھ(راولاکوٹ)پانچ لاکھ مرد و زن باغ حویلی وغیرہ تین لاکھ مرد و زنباقی تمام اضلاع میں اور کشمیری مقیم پاکستان منجملہ ساڑھے تین لاکھکشمیر میں بسنے والے سدوزئی کم و پندرہ لاکھ نفوس پر مشتمل ہے۔ جو کہ آزاد ریاست کی۔موجودہ کل آبادی کا تقریبا 38فیصد ایک قبیلہ آباد ہے۔

[quads id=RndAds]

سدھنوتی اور پونچھ کی.کل آبادی کا90فیصد سدوزئی قبیلہ پر مشتمل ہے تقریبا پچاس ہزار سابق فوجی ہیں اور ساڑھے لاکھ مرد جن میں تین لاکھ نوجوان ہیں، یہ سارے لوگ سخت جان اور جنگجو ہیں ہنگامی حالات میں قوم قبیلے پر کٹ مرنے کا جذبہ رکھتے ہیں 98فیصد کٹر سنی العقیدہ ہیں۔70فیصد خواندہ اور 60فیصد میٹرک سے اوپر کی تعلیم کے حامل ہیں۔

[quads id=RndAds]

فوج کے بعد دوسرے نمبرپر بیرون ملک ملازمت تیسرے نمبر پر سرکاری ملازمت، چوتھے نمبر پر ذاتی کاروبار اور پانچویں نمبر پر کھیتی باڑی کرتے ہیں۔ سیاست اکثریت کا مشغلہ ہے، تمام بڑی چھوٹی جماعتوں میں فرنٹ لائن لیڈر کے طور پر نمایاں ہیں، بانئ ریاست سمیت۔ پانچ صدور اسی قبیلے سے ہیں، اعلی عدلیہ کی آٹھ چیف جسٹس اسی قبیلے سے رہے، چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف سمیت چار جرنیل اسی قبیلے سے رہےسیکریٹریز، وزرا،وزیر اعظم اسی قبیلے سے رہے، آج تک ریاست کی تعریف میں کوئی حکومت سدوزئی قبیلے کو نمائندگی بغیر نہیں چل سکی۔

وفاق کے پہلے ہائیکورٹ کا بانی چیف جسٹس اسی قبیلے سے تھا۔وفاق کا موجودہ اکاؤنٹنٹ جنرل اسی قبیلے سے ہے۔آزادکشمیر میں کم۔بیش 80 پی ایچ ڈی ڈاکٹر میں سے 55فیصد اسی قبیلے کے ہیں۔پچیس ہزار پوسٹ گریجویٹ پندرہ ہزار لا گریجویٹ اسی قبیلے سے ہیں۔دنیا کی تاریخ سات سالہ نونہال لٹل پروفیسر زیدان حامد بھی اسی قبیلے سے ہے۔پاکستان کے پہلے نامور فیزیسسٹ ڈاکٹر محمد اسلم کاتعلق بھی اسی قبیلے تھا۔اس قبیلے کے ساڑھے بارہ نفوس پاکستان کے مختلف صوبوں میں آباد ہیں جن میں مظفرگڑھ، ملتان،ڈی جی خان ڈیرہ اسماعیل خان، سوات، دیر، صوابی، چارسدہ سمیت خیبر پختونخواہ میں بستے ہئں۔اس قبیلے کے چالیس لاکھ مرد و زن افغانستان میں بستے ہیں۔

[quads id=RndAds]

سدوزئی رنگ نسل خصلت دوستی دشمنی کی یکساں روایات ہونے کے باوجود سرائکی، پوٹھوہاری، پہاڑی، بلوچی، ہند کو اور پشتو زبان بولتے ہیں ۔مہمان نواز اور بلا کے ذہین لوگ ہوتے ہیں۔ داود علیہ سلام کے منتخب کردہ بادشاہ طالوت کی نسل سے قیس عبدالرشید صحابی رسول صلی اللہ علیہ وسلم اور انکی نسل سے 950ہجری میں سدو بن اتمان کی نسل سے نواب جسی خان سدو بن عمر کی۔نسل احمد خان سدوزئی المعروف احمد شاہ در دوراں کی اولاد سدوزئی کہلاتی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں