ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن 209

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن ایک کورونا مریض کی موت پر پاکستان کو کتنے ڈالر دے رہی ہے؟

اسلام آباد: پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے رہنما نبیل گبول نے الزام عائد کیا ہے کہ ڈبلیو ایچ او کورونا سے مرنے والے ہر مریض کے لئے وفاقی حکومت کو 3,000ڈالر ادا کر رہا ہے ، لہذا طبی اموات کو بھی کورونا مریض ظاہر کیا جارہاہے۔

[quads id=RndAds]


وفاقی حکومت نے زبردستی سندھ میں لاک ڈاؤن کھول دیا ، نتائج کی ذمہ داری وفاق پر عائد ہوگی۔ اگر کورونا کیسز کی تعداد دوگنی ہوجاتی ہے تو ، سندھ حکومت اپنی مرضی کے مطابق کام کرے گی اور وفاق کی اطاعت نہیں کرے گی۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے نبیل گبول نے کہا کہ وفاقی حکومت نے سندھ میں زبردستی لاک ڈاؤن کھول دیا ہے۔ وفاقی حکومت کی ہدایت پر پیر سے لاک ڈاؤن کھولے جارہے ہیں۔
جو بھی نتیجہ نکلے گا ، اس کی ذمہ دار وفاقی حکومت ہوگی۔

حکومت سندھ 20 مئی تک کیسزز کی تعداد پر غور کرے گی۔ اگر کورونا کیسز کی تعداد دوگنی ہوجاتی ہے تو وہ سختی سےدوبارہ لاک ڈائون کرےگئ۔ سندھ حکومت اپنے فیصلے خود کرے گی۔ اور وفاق کی بات نہیں مانے گی۔

[quads id=RndAds]

انہوں نے کہا کہ اگر سندھ حکومت وقت پر لاک ڈائون نہ کرتی تو اب تک کورونا کیسز کی تعداد تین لاکھ تک پہنچ چکی ہوتی اور جس شرح سے کورونا کیسز کی تعداد بڑھ رہی ہے۔ ایک لاکھ تک پہنچ جائے گی

انہوں نے الزام لگایا کہ وفاقی حکومت اور ڈبلیو ایچ او کے مابین ایک معاہدہ ہوا ہے کہ کورونا سے فوت ہونے والے ہر فرد کی موت پر۳ہزار ڈالر ملیں گے ، لہذا کسی بھی طبی موت کو کورونا بیماری ہی قرار دیا جائے گا۔

[quads id=RndAds]

دوسری طرف ، پنجاب میں کورونا کیسوں کی تعداد کو چھپایا جارہا ہے اور وفاقی حکومت من مانی کر کے کرونا کیسز کی تعداد میں جوڑ توڑ کررہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں